سفر//  اريبہ سليم

Published on :

سفرِ منزل کس شب کو اختتام ہوا یاد نہیں، تجھ سے ملاقات کا وہ خواب یاد نہیں، منزل تک پہنچنے کے لیے جو اذیتیں ملیں، اُن اذیتوں میں ملی لذت یاد نہیں، سفر تنہا ہی کرنا تھا تیری جانب، مگر رقیب اتنے ملے کہ یاد نہیں، ہجر اختتام کے قریب تھا مگر پھر، موڑ ایسا آیا کہ راستہ یاد نہیں، وہ راستوں کی نا ہمواریاں تو ٹھیک، پر تیری بے رُخی ایسی تھی کہ یاد نہیں، وہ جسکو اریبہٓ میں سمجھی تھی ہمسفر، وہ رہِ سفر میں کب چھوڑ گیا یاد نہیں۔ +230

سفرِ زندگی// Zainab Naghman

Published on :

تصویروں سے بھرے گھر بہت دیکھے رشتوں میں خلوص مگر کم دیکھے آہیں بھرتے،سسکتے بہت دیکھے کاندھا دینے والے مگر کم دیکھے یادوں کے میلے بہت دیکھے یاروں کے ملن مگر کم دیکھے شکوے،شکایت کرتے بہت دیکھے ہنسانے والےمگر کم دیکھے ہاتھ چھوڑ جانے والے بہت دیکھے دعاوں میں اٹھتے […]

لسان – لاریب رضوی // تیسری قسط

Published on :

وہ چاۓ کے گرم کپ ہاتھ میں لئے کالے آسمان کو دیکھ رہا تھا۔ آسمان پر بھی اسکے دل کی طرح ایک دھند سی چھائی تھی۔ مگر وہ آج دل کی دھند میں بھٹکا نہیں تھا آج تو اسے دھند میں ایک امید نظر آئ تھی جو اسے زندگی کی […]

حب عشق// عفیفہ ہزل

Published on :

ک پریم کتھا جو سنائی گئ تھی وہ میرے دل میں  سما گئ ہے جو ہولے ہولے سلا رہی ہے میری اداسی بڑھا رہی ہے جو وحشتوں کو نبھا رہی ہے اک خواب مجھ کو دکھا رہی ہےمگر مجھ کو منا رہی ہے خواب نگر کی چاہ نہ کرنا کبھی […]